میرا پیغام محبت ، امن اور مساوات تمام انسانیت کے لیے ۔ منجانب "فرخ صدیقی"

Friday, July 15, 2011

شانِ رسالت ﷺبمقابلہ شان ِالطاف

سیاست  اور  جہالت  نے  بنا  دیا  منافق  اور  لا مذہب  ہمیں
توہین ِ رسالت تو برداشت ہے مگر توہین ِ قیادت برداشت نہیں
کچھ عرصہ قبل جب نبی کریم ﷺکی شان میں پے در پےگستاخیاں جاری تھیں تو کراچی کاایک مخصوص طبقہ، نام نہاد مسلمان ،خاموش تماشائی بنا رہا اور جب یہ احتجاج دنیا بھر کے ممالک میں ہونے لگا تب بھی یہ مخصوص بے دین طبقہ خاموش رہا ۔۔۔
متحدہ قومی موومنٹ اور ان کے حامیوں کے نزدیک نبی کریم ﷺکی شان ِ اقدس کی کوئی اہمیت نہیں ۔۔۔۔الطاف حسین کو اگر ”غنڈہ یا بدمعاش “کہہ دیا گیا تو ان کے تن بدن میں آگ لگ گئی ۔۔۔۔نبی کریم ﷺ کی شان میں کوئی کچھ بھی کہے یہ چپ سادھے رہتے ہیں ۔یعنی الطاف حسین کی شان و ناموس (نعوذباللہ ) نبی کریم ﷺکی شان اقدس سے زیادہ محترم اور قابل تقدیس ہے ۔
مرزا صاحب نے غلط تو نہیں کہا کہ وہ ”بدمعاش“ہے ۔آج جو کچھ کراچی ، حیدر آباد اور اس کے ملحقہ علاقوں میں جو کچھ ہوا وہ اس بات کی واضح دلیل ہے ۔
ہاں اپنے مقاصد کے لیے تو    :::::--------
*   ہر سال جناح گراؤنڈ میں عوام سے بھتہ لوٹ کر ”محفل میلاد مصطفےٰﷺ“تو منایا جاتا ہے ۔تاکہ مسلمانوں میں بھی  شمار رہے ۔
*   امریکا و برطانیہ کو اپنی طرف متوجہ کرنے اور اپنی قوت دکھانے کے لیے ”ڈاکٹر عافیہ کی رہائی “کے لیے ریلی نکالی گئی ۔تاکہ امریکا و برطانیہ کو بھی بلیک کیا جاسکے۔ کیوں کہ ان دنوں ”ڈاکٹر عمران فاروق“کے بہیمانہ قتل میں بھائی جان کے ملوث ہونے کے شواہد ملے تھے۔
*   برطانوی آقاؤں کو خوش کرنے کے لیے احمدیوں اور قادیانیوں کی حمایت اور ان کی عبادت خانوں اور تبلیغ کی اجازت کے لیے ”مسلسل بیانات “ دیے گئے ۔تاکہ اقلیت میں بھی اپنے حامی اور ہمنوا پیدا کیے جاسکے۔
*   احمد یوں کے پیشوا مرزا طاہر کے واصل جہنم پر اس کے لیے الطاف حسین نے ”دعائے مغفرت “کی ۔تاکہ برطانوی آقاؤں میں اپنے لبرل ازم کو ظاہر کیا جاسکے ۔
کبھی بھی عالمی اسلامی ظلم و بر بریت یا پھر کسی بھی اسلامی محاذ پر بھائی جان یا ان کے حامیوں نے بیان نہیں دیا  ۔کبھی احتجاج نہیں کیا ۔کیوں کہ وہ اللہ تعالیٰ کے علاوہ تمام دنیا وی خداؤں کو خوش رکھنا چاہتے ہیں ۔
ہمیں ڈر ہے کہ کہیں اپنے احمدی اسلاف کی طرح کل کلاں بھائی جان ”مدعی نبوت “نہ ہو جائیں ۔   (العیاذ باللہ)
آپ کا کیا خیال ہے      ۔۔۔۔  ؟؟؟

---------------------------------
-----چلیے کچھ دل جگروں کی محفل میں بھی ----- 







مصنف  :  ابن ساحل ۔(کراچی)

1 : : : ----- ((( تبصرے جات ))):

Dr. Hijazi said...

متحدہ کی خام خیالی مہاجر صوبے کے بارے میں ایک فیس بکی تحریر ملاحطہ ہو::::----

ایسا صوبہ جہاں فطرانہ اور زکوٰۃ حکم ا الہی نہ ہو بلکہ حکم بھائی ہو ،
جہاں قربانی ایک دینی فریضہ نہ ہو بلکہ “اپنی” کھال بچانے کی سالانہ مشق ہو،
جہا…ں قانون کا دوسرا نام الطاف ہو ،
جہاں کا چیف جسٹس اغوا و قتل کے ٣٠٠ سے زائد مقدمات میں لندن میں …مفرور ہو ،
جہاں انصاف کا موٹو “جو قائد کا غدار ہے وہ موت کا حقدار ہے” کا نعرہ ہو،
جہاں دھوبی ٹی-ٹی، کانہ، لنگڑا، شرفا کے نام ہوں،
جہاں کا کورٹ نائن زیرو میں لگے ور فیصلہ ہمیشہ “بھائی” ہی کے حق میں ہو،
جہاں قاتل اور ڈکیت ہونا عزت کا معیار ہو،
جہاں کا جمعے کا خطبہ لندن سے ٹیلیفون پر دیا جاتے، “بھائی” ہی مفتی اعظم ہو اور “بھائی” ہی رؤیت ہلال کا اعلان ہو۔

اگر یہ سب غلط اور صرف بکواس ہے تو پیر ومرشد الطاف حسین کی شان میں قصیدہ پڑھنے والے ایک پاگل کی بکواس کو بکواس ہی کیوں نا سمجھا گیا؟

پورے کراچی کو آگ لگا دی گئی۔ اگر ایم کیو ایم اتنی ہی شریف جماعت ہے تو یہ کیا ہو رہا ہے؟

Post a Comment

خوش آمدید