میرا پیغام محبت ، امن اور مساوات تمام انسانیت کے لیے ۔ منجانب "فرخ صدیقی"

Saturday, July 16, 2011

کیا تم بھول گئے ؟؟؟


یہاں روندھے کتنے پھول گئے ؟؟؟
  گولیوں سے اپنے بھون دیے  
کس بستی میں جا بیٹھے ہو ؟؟؟
کیا ساتھی تم سب بھول گئے ؟؟؟

جو باپ نے کاندھے کھوئے ہیں
ماؤں نے جنازے دھوئے ہیں
بھائی سے لپٹ کر بے پردہ بہنوں نے
جوآنسوں روئے ہیں   
کیا ساتھی تم سب بھول گئے ؟؟؟

مسجد میں لہو کے دریا تھے
گھر گھر میں نوحے برپا تھے
اس گلشن کے کتنے پھول گئے
کیا ساتھی تم سب بھول گئے ؟؟؟

7 جولائی 2007 ؁کا دن ، جو ہم کبھی فراموش نہیں کرسکتے ۔۔۔؟پاکستانی تاریخ کا ایک سیاہ ترین دن ہے ۔مگر افسوس کہ ہم بھول چکے ہیں کیوں کہ نہ تو یہ ویلنٹائن ڈے ہے نہ ہی مدر ڈے اور نہ ہی شارخ خان کی سالگرہ کا دن ہے نہ ہی یہ کوئی آزادانہ خیال رکھنے والوں کا دن ہے ۔یہ تو حیا کی پیکر اور صرف اللہ کی راہ میں نکلنے والوں کو جو اُس وقت کے فرعون(پرویزملعون) اور اس کے حواریوں نے جو ظلم وستم کے پہاڑ توڑے اور اپنی مسجدوں تک کونہیں چھوڑا اور بم اور گولیاں کی بوچھاڑ کردی اور مسجدوں کو چھلنی کردیا یہاں تک کہ ان معصوم حوا کی بیٹیوں جو نا محرم کودیکھتی تک نہیں ان کو ہماری ہی پاک فوج نے بے دردی سے کچل دیا ۔و ہی بہنیں جو یہ سمجھتی تھیں کہ پاک فوج ان کے بھائی ہیں اور بھائیوں نے یہ ثابت کردیا کہ وہ تو صرف حکم کی پیروی کرتے ہیں جو ان کے اُس وقت کے آقا (پرویز ملعون) کا حکم ماننے سے گریز نہیں کرتے کیوں کہ وہ نعوذباللہ اُن کا خدا ہے اگر یہی خوف اللہ سبحانہ وتعالیٰ  سے ہوتا تو آج جو ہمارے ملک میں جو حالات ہیں وہ نہ ہوتے۔۔۔۔
جامعہ حفصہ اور لال مسجد کے طلبہ وطالبات کا صرف یہ گناہ تھا کہ انہوں صرف ایک جسم فروش اور ایک اڈہ چلانے والوں کو صرف اس لیے یرغمال بنایا کہ وہ یہ کام چھوڑ دیں اور صراط مستقیم پر چلیں اور انہوں نے تو صرف اس حدیث کی پیروی کی کہ(جب برائی کو دیکھو تواس کو ختم کرو اگر طاقت ہے تو طاقت سے ، ورنہ زبان سے اس کو برا بھلا کہو ورنہ سب سے ادنی درجہ اس کو دل میں برا جانو )۔میری ان حوا کی بیٹیوں اور وہ محمد بن قاسم کے سپوتوں نے صرف اس حدیث کی پیروی کی تھی جس کی سزا انہیں فاسفورس بم کی صورت میں ملی ۔۔۔۔۔۔۔! ظلم تو یہ ہے کہ جامعہ حفصہ کی 1500سے زائد طلبہ اب تک لاپتہ ہے ۔۔۔؟
میرے بھائیو!!! آج ہم جن پریشانیوں کا شکار ہیں وہ ان معصوم بہنوں کی لازمی دل سے نکلی ہوئی آہ ہوگی جو اللہ سبحانہ وتعالیٰ  نے سن لی ہے اور اس کے بعد سے ہمارا جو حشر ہوا ہے وہ آپ کے سامنے ہے ۔۔۔۔۔خوکش حملے،مہنگائی ،لوڈشیڈنگ،سی این جی،آٹا ،چینی یہاں تک کہ ہم بے بس ہوگئے ہیں جب لال مسجد اور جامعہ حفصہ پر آپریشن کیا جارہا تھا تو سب ہی کہہ رہے تھے کہ اس کا انجام بہت بھیانک ہوگا اور وہ آپ کے سامنے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔کیوں کہ جب کسی باپ کی لاڈلی بیٹی اور ماں کا سہارا اور بھائی کی آنکھ کا تارا جب فاسفورس بم سے شہید کردیئے جائیں اور ستم یہ کہ ان کی لاشوں کو بے دردی سے نالوں میں یا اجتماعی طور پر دفن کیا گیا اور غسل فائربریگیڈ کے پانی سے دیا گیا اور باقی کا یہ پتہ ہی نہیں کہ وہ کہاں ہیں تو سوچیں ان کا دل کا کیا حال ہوگا اور اوپر سے یہ کہا جائے کہ وہ دہشت گرد تھے۔ تو پھر وہ خودکش حملے نہیں تو کیا ان کے پیر چومیں گے ۔میں یہ نہیں کہہ رہا کہ اسلامی ریاست میں خودکش حملے جائز ہیں ۔۔۔۔۔۔؟ قطعی نہیں مگر وہ لوگ کیا کریں جن کی اکلوتی اولاد کو بے دردی سے  شہید کردیا جائے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟اور حکومتی اعلان کے باوجود جب ان طلبہ نے گرفتاریاں پیش کی تو ان پر فائرنگ کی گئی۔
ایک 13 سالہ بچہ جب گرفتاری دینے کے لیے آیا تو اس پر فائرنگ کی گئی اور 3گولیاں لگی جو 2 آپریشن سے نکال لی گئی اور تیسری ابھی بھی اس کے دھڑ میں ہے جس سے اس کا نچلا حصہ مفلوج ہوگیا اور اس وقت کے فرعون (پرویز ملعون) کی امریکہ آشیرباد حکومت نے منافقت بھرے وعدے کئے کہ تمہارا علاج حکومتی خرچے پر کرایا جائے گا مگر 3 سال گزرنے کے باوجود تاحال اس کو کوئی علاج کا خرچہ نہیں دیا گیا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔!کیا جو ملک اسلام کی بنیاد پر حاصل کیا گیا ہو وہاں اسلام کے پیروکاروں کا یہ حال کیا جاتا ہے۔۔؟ اگر اس طرح ہوتا ہے تو پھر یہ عذاب کی پہلی جھلک ہے اور ہم بھی لال مسجد اور جامعہ حفصہ کی طلبہ و طالبات کے خون میں برابر کے شریک ہیں ۔۔۔۔۔۔؟ہم ہی کہہ رہے تھے کہ وہاں اسلحہ ہے اور سرنگ ہیں ۔۔۔۔۔۔؟اور القاعدہ کے لیڈر ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔؟تو کہاں تھے وہ اسلحہ کے ڈپو۔۔۔۔۔؟کہاں گئے وہ لیڈر۔۔؟ اور کیوں میڈیا کے لوگوں کو سروے نہیں کرایا گیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟وہاں جب کچھ صحافیوں نے ان جگہ کی نشاندہی کی جہاں ان کا کہنا تھا کہ وہاں غیر ملکی طلبہ اور لیڈر ہیں تو ان کو منع کریا گیا کیونکہ وہاں تو کوئی نہیں تھا اور یہ صرف ڈالر کے حصول کے لیے یہ سب ڈرامہ رچایا گیا جس کا خمیازہ ہم سوات آپریشن،شمالی وزیرستان آپریشن کی صورت میں بھگت رہے ہیں میرے بھائیوں ہمیں استغفار کی ضرورت ہے اور ہر دعا میں جامعہ حفصہ اور لال مسجد کے اہل خانہ کے لیے دعا کریں کہ انہیں صبر سلیم عطا ہو۔( آمین)

 ---- حوا کی بیٹیوں اور محمد بن قاسم کے بیٹوں پر ڈھائے گئے مظالم کیمرے کی آنکھ سے -----




























































مصنف:  محمد عدنان عالم  ۔(کراچی)
            http://adnanwakeupyouth.blogspot.com/                       
             
ادارہ’’سنپ‘‘ مصنف  کا ہمہ تن مشکور و ممنون ہے۔یاد آوری جاری رکھنے کی التماس۔[شکریہ]

3 : : : ----- ((( تبصرے جات ))):

Dr. Hijazi said...

برادرعزیز ۔۔۔!!!۔
سلام مسنون
عدنان بھائی کی استحریر نے اک بار پھر آنکھوں کو نم کر دیا ۔۔۔
اس موقع پر تو میں یہی کہوں گا کہ
بقول شاعر

یاد ماضی عذاب ہے یارب
چھین لے مجھ سے حافظہ مرا

نظم بھی کافی معنی خیز ہے ۔
اور تصاویری البم کافی دلخراش ہیں۔۔

دل تو چاہتا ہے کہ گریہ کروں
مگر۔۔۔۔۔۔
دعا ہے
اللہ ہمارے حال پہ رحم فرمائے ۔

دعا گو
آپ کا
ڈاکٹر حجازی ۔۔۔ جامعہ کراچی

SUB KUCH MILE GA said...

Salam-e-Masnoon
Ab Mere Kehne Ki gunjaish NAhi UStad-e-Muhtaram ne Jo Kuch Kaha Wo Hi Kafi He.
Talb-e-Dua'a

فرخ صدیقی said...

استاد محترم
آپ کی تشریف آوری ہمارے لیے باعث صد افتخار ہوئی ہے۔
دیگر یہ کہ ۔۔۔۔
آپ کی حوصلہ افزائی نے دل باغ باغ کردیا۔
امید ہے آئندہ بھی اسی طرح حوصلہ افزائی کرتے رہیں گے۔
جزاک اللہ خیر


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

محترم عباد الرحمن بھائی
آپ کی تشریف آوری کا شکریہ
واقعی آپ کی بات درست ہے کہ استاد محترم کی رائے کے آگے ہماری رائے کی کوئی گنجائش نہیں۔
آتے جاتے رہیے گا۔

Post a Comment

خوش آمدید